History of Islam | Islamic Center Online

Islam is a religion of Peace. Islam in only on religion in the world which gives importance for girls. Islam gives rights for girls. This is the biggest religion in the world. If you want to Learn the basics of Islam. Please we gives you and advice that please learn form islamic scholar. or go to Rohani Markaz call Islamic center.

Important Points About Islam

Makkah, Islam, Islam in Makkah, Center of Islam.

Makkah Allah Pak ka ghar.

Basics of Quran Form Mandi Makraz

 

                                                اسلام کے بارے میں بنیادی معلومات

      اس روئے زمین پر مختلف مذاہب و اَدیان کے ماننے والے آباد ہیں۔ جو اپنی اپنی تہذیب اور اعتقاد کے مطابق زندگی گزاررہے ہیں۔ لیکن اللہ ربُّ العلمین کی بارگاہ عالیہ میں مقبول دین اسلام ہے۔ چنانچہ قرآن مجید میں ارشاد باری تعالیٰ ہے: اِنَّ الدِّیْنَ عِنْدَ اللّٰهِ الْاِسْلَامُ ترجمۂ کنز الایمان: بے شک اللہ کے یہاں اسلام ہی دین ہے۔ اسلام ایک فطری اور آفاقی دین ہے اور انسانیت کےلیے کامل ہدایت ہے اس کی تعلیمات اور احکام اللہ ربّ العزّت کے نازل کردہ ہیں لہذا انہیں پر عمل پیرا ہو کر دونوں جہاں میں کامیابی ممکن ہے۔ ہر ایک کو چاہیے کہ اسلام کے بارے میں بنیادی معلومات حاصل کرے اور کچھ کوتاہی پائے تو اسلامی تعلیمات کی روشنی میں اپنی اصلاح کرے۔ (اسلام کے بنیادی عقیدے)

ذات باری تعالٰی

          مسلمان ہونے کےلیے ضروری ہے کہ انسان اس بات کو سچے دل سے مانے اور زبان سے اقرار کرے کہ اﷲ ایک ہے ،کوئی اس کا شریک نہیں، نہ ذات میں، نہ صفات میں، نہ افعال میں، نہ احکام میں، نہ اسما میں، وہ واجب الوجود ہے، یعنی اس کا وجود ضروری ہے، قدیم ہے یعنی ہمیشہ سے ہے، اَزَلی کے بھی یہی معنی ہیں، باقی ہے یعنی ہمیشہ رہے گا اور اِسی کو اَبَدی بھی کہتے ہیں۔ وہی اس کا مستحق ہے کہ اُس کی عبادت و پرستش کی جائے۔وہ کسی کا محتاج نہیں اور تمام جہان اُس کا محتاج ہے۔ اس کی ذات کا اِدراک عقلاً مُحَال کہ جو چیز سمجھ میں آتی ہے عقل اس کو محیط ہوتی ہے اور اس کو کوئی احاطہ نہیں کر سکتا ، البتہ اس کے افعال کے ذریعہ سے اِجمالاً اس کی صفات، پھر اُن صفات کے ذریعہ سے معرفتِ ذات حاصل ہوتی ہے۔ جس طرح اُس کی ذات قدیم اَزلی اَبدی ہے، صفات بھی قدیم ازلی ابدی ہیں۔ اُس کی صفات نہ مخلوق ہیں نہ زیرِ قدرت داخل۔ذات و صفات کے سِوا سب چیزیں حادث ہیں، یعنی پہلے نہ تھیں پھر موجود ہوئیں۔صفاتِ الہٰی کو جو مخلوق کہے یا حادث بتائے، گمراہ بد دین ہے۔ جو عالم میں سے کسی شے کو قدیم مانے یا اس کے حدوث میں شک کرے، کافر ہے۔ اللہ پاک کسی کا باپ ہے، نہ بیٹا، نہ اُس کے لیے بی بی، جو اُسے باپ یا بیٹا بتائے یا اُس کے لیے بی بی ثابت کرے کافر ہے، بلکہ جو ممکن بھی کہے گمراہ بد دین ہے۔

More Related Topics About Islam

Contact us for all your problems and Get 100% Result

Professor. Javed Hussian Shah
Call Us: 0092-300-4222246

 

Message Now For Istikhara